کیلا

Musa


پانی دینا
اعلی

زراعت
ٹرانسپلانٹ شدہ

کٹائی
365 - 456 دن

مزدور
اعلی

سورج کی روشنی
مکمل سورج

pH کی قدر
6 - 7.5

درجہ حرارت
4°C - 21°C

زرخیزکاری
اعلی


کیلا

تعارف

کیلا ایک قابل تناول پھل ہے، جو جنس موسا کی متعدد اقسام کے بڑے پھولدار پودے بناتے ہیں۔ کچھ کیلے کھانا بنانے کے لیے استعمال ہوتے ہیں اور کچھ میٹھے کے طور پر استعمال ہوتے ہیں۔ موسا کی نسلیں جنوب مشرقی ایشیا اور آسٹریلیا میں پائی جاتی ہیں۔ کیلا ایک گرم علاقے کی فصل ہے، جو کم نمی کی جگہ کو اہمیت دیتا ہے، لیکن اس کو سطح سمندر سے 2000 میٹر بلندی پر لگانا چاہیئے۔

دیکھ بھال

کیلوں کو اچھی نشوونما کے لیے زیادہ گرمائش کی ضرورت ہوتی ہے۔ اگر ضرورت ہو تو، عمارت یا سیمنٹ کے قریب کیلوں کو لگا کر اضافی گرمائش دی جا سکتی ہے۔ جیسا کہ یہ نسل زیادہ پانی استعمال کرتی ہے، تو گرم موسم میں باقاعدگی سے پانی دینا بہت ضروری ہے۔ پودے خشک نہیں ہونے چاہیئے۔ اس کے علاوہ، پانی کا کھڑا رہنا، خاص طور ہر ٹھنڈے موسم میں، جڑوں کے مرجھانے کا سبب بنتا ہے۔ آدھ سڑی گھاس کی ایک موٹی تہہ نمی کو جزب کرتی ہے۔ کیلے کے پودے کھانا فراہم کرتے ہیں اور ان پر 5۔0-2 پاونڈز ( نشوونما کے مرحلے پر منحصر ہوتے ہوئے) ایک ماہ میں تنے سے تقریبا 4-8 فٹ اوپر استعمال کرنا چاہیئے۔ کیلے ہوا سے متاثرہ ہونے کے لیے حساس ہوتے ہیں اور زیادہ پیداوار اور اچھی شکل کے لیے حفاظت کی ضرورت ہوتی ہے۔ نئے تنے کیلے کے پودوں کے اردگرد بنتے ہیں۔ ان کو اچھی طرح چھانٹا جائے تا کہ یہ اہم پودے کو وہ تمام توانائی فراہم کر سکیں جو اس کو نشوونما کے دوران چاہیئے۔ اگر پودے میں پھل لگنا شروع ہو تو، تنوں کو نئے پودوں کے لیے بیجوں کے طور پر استعمال کیا جا سکتا ہے (جب 3 فٹ لمبے ہوں)۔ بیجوں کو بھی استعمال کیا جا سکتا ہے۔

مٹی

کیلے نم مٹی میں نشوونما پاتے ہیں، لیکن اچھی نشوونما کے لیے ان کو اچھی، گہری، اچھی نکاسی شدہ مٹی جو جنگلی مٹی، پتھریلی ریت، مارل، ریڈ لیٹرایٹ، آتش فشا، ریتلی مٹی اور بھاری مٹی بھی ہو سکتی ہے، ان میں لگانا چاہیے۔ یہ 5۔5 اور 5۔6 پی ایچ والی ایسڈ مٹی کو ترجیح دیتے ہیں۔ کیلا نمکین مٹی کے خلاف مزاحمتی نہیں ہے۔ مٹی میں کیلے کی اچھی نشوونما کے لیے بنیادی چیز مٹی کی اچھی نکاسی ہے۔ دریا کے کناروں کی دھوئی ہوئی مٹی بھی کیلوں کی نشوونما کے لیے بہتر ہے۔

آب و ہوا

کیلے کے پودوں کو پھول بنانے کے لیے 10-15 ماہ ٹھنڈ سے پاک ماحول اور 15-30 سینٹی گریڈ کے درجہ حرارت کی ضرورت ہوتی ہے۔ زیادہ تر اقسام کی نشوونما رک جاتی ہے جب درجہ حرارت 53 فارن ہایٹ (5۔11 سینٹی گریڈ) سے کم ہوتا ہے۔ زیادہ درجہ حرارت پر، نشوونما تقریبا 80 فارن ہایٹ (5۔26 سینٹی گریڈ) پر کم اور جب درجہ حرارت 100 فارن ہایٹ (38 سینٹی گریڈ) تک جاتا ہے تو مکمل طور پر رک جاتی ہے۔ زیادہ درجہ حرارت اور سورج کی روشنی پتوں اور پھلوں کو جلا سکتے ہیں، جب کہ کیلا مکمل سورج کی روشنی میں اچھی نشوونما پاتا ہے۔ جما دینے والا درجہ حرارت پتوں کو متاثر کرتا ہے۔ کیلے ہوا سے اڑ جانے کے لیے حساس ہوتے ہیں۔

ممکنہ بیماریاں

نشوونما کا مرحلہ منتخب کر کے دیکھیں کہ اس عرصے کے دوران کون سی بیماریاں آپ کی فصل کو نقصان پہنچا سکتی ہیں۔

کیلا

کیلا

اگانے کے بارے میں سبھی معلومات پلانٹکس میں حاصل کریں!


کیلا

Musa

کیلا
ابھی پلانٹکس استعمال کریں!

تعارف

کیلا ایک قابل تناول پھل ہے، جو جنس موسا کی متعدد اقسام کے بڑے پھولدار پودے بناتے ہیں۔ کچھ کیلے کھانا بنانے کے لیے استعمال ہوتے ہیں اور کچھ میٹھے کے طور پر استعمال ہوتے ہیں۔ موسا کی نسلیں جنوب مشرقی ایشیا اور آسٹریلیا میں پائی جاتی ہیں۔ کیلا ایک گرم علاقے کی فصل ہے، جو کم نمی کی جگہ کو اہمیت دیتا ہے، لیکن اس کو سطح سمندر سے 2000 میٹر بلندی پر لگانا چاہیئے۔

اہم حقائق

پانی دینا
اعلی

زراعت
ٹرانسپلانٹ شدہ

کٹائی
365 - 456 دن

مزدور
اعلی

سورج کی روشنی
مکمل سورج

pH کی قدر
6 - 7.5

درجہ حرارت
4°C - 21°C

زرخیزکاری
اعلی

دیکھ بھال

کیلوں کو اچھی نشوونما کے لیے زیادہ گرمائش کی ضرورت ہوتی ہے۔ اگر ضرورت ہو تو، عمارت یا سیمنٹ کے قریب کیلوں کو لگا کر اضافی گرمائش دی جا سکتی ہے۔ جیسا کہ یہ نسل زیادہ پانی استعمال کرتی ہے، تو گرم موسم میں باقاعدگی سے پانی دینا بہت ضروری ہے۔ پودے خشک نہیں ہونے چاہیئے۔ اس کے علاوہ، پانی کا کھڑا رہنا، خاص طور ہر ٹھنڈے موسم میں، جڑوں کے مرجھانے کا سبب بنتا ہے۔ آدھ سڑی گھاس کی ایک موٹی تہہ نمی کو جزب کرتی ہے۔ کیلے کے پودے کھانا فراہم کرتے ہیں اور ان پر 5۔0-2 پاونڈز ( نشوونما کے مرحلے پر منحصر ہوتے ہوئے) ایک ماہ میں تنے سے تقریبا 4-8 فٹ اوپر استعمال کرنا چاہیئے۔ کیلے ہوا سے متاثرہ ہونے کے لیے حساس ہوتے ہیں اور زیادہ پیداوار اور اچھی شکل کے لیے حفاظت کی ضرورت ہوتی ہے۔ نئے تنے کیلے کے پودوں کے اردگرد بنتے ہیں۔ ان کو اچھی طرح چھانٹا جائے تا کہ یہ اہم پودے کو وہ تمام توانائی فراہم کر سکیں جو اس کو نشوونما کے دوران چاہیئے۔ اگر پودے میں پھل لگنا شروع ہو تو، تنوں کو نئے پودوں کے لیے بیجوں کے طور پر استعمال کیا جا سکتا ہے (جب 3 فٹ لمبے ہوں)۔ بیجوں کو بھی استعمال کیا جا سکتا ہے۔

مٹی

کیلے نم مٹی میں نشوونما پاتے ہیں، لیکن اچھی نشوونما کے لیے ان کو اچھی، گہری، اچھی نکاسی شدہ مٹی جو جنگلی مٹی، پتھریلی ریت، مارل، ریڈ لیٹرایٹ، آتش فشا، ریتلی مٹی اور بھاری مٹی بھی ہو سکتی ہے، ان میں لگانا چاہیے۔ یہ 5۔5 اور 5۔6 پی ایچ والی ایسڈ مٹی کو ترجیح دیتے ہیں۔ کیلا نمکین مٹی کے خلاف مزاحمتی نہیں ہے۔ مٹی میں کیلے کی اچھی نشوونما کے لیے بنیادی چیز مٹی کی اچھی نکاسی ہے۔ دریا کے کناروں کی دھوئی ہوئی مٹی بھی کیلوں کی نشوونما کے لیے بہتر ہے۔

آب و ہوا

کیلے کے پودوں کو پھول بنانے کے لیے 10-15 ماہ ٹھنڈ سے پاک ماحول اور 15-30 سینٹی گریڈ کے درجہ حرارت کی ضرورت ہوتی ہے۔ زیادہ تر اقسام کی نشوونما رک جاتی ہے جب درجہ حرارت 53 فارن ہایٹ (5۔11 سینٹی گریڈ) سے کم ہوتا ہے۔ زیادہ درجہ حرارت پر، نشوونما تقریبا 80 فارن ہایٹ (5۔26 سینٹی گریڈ) پر کم اور جب درجہ حرارت 100 فارن ہایٹ (38 سینٹی گریڈ) تک جاتا ہے تو مکمل طور پر رک جاتی ہے۔ زیادہ درجہ حرارت اور سورج کی روشنی پتوں اور پھلوں کو جلا سکتے ہیں، جب کہ کیلا مکمل سورج کی روشنی میں اچھی نشوونما پاتا ہے۔ جما دینے والا درجہ حرارت پتوں کو متاثر کرتا ہے۔ کیلے ہوا سے اڑ جانے کے لیے حساس ہوتے ہیں۔

ممکنہ بیماریاں

نشوونما کا مرحلہ منتخب کر کے دیکھیں کہ اس عرصے کے دوران کون سی بیماریاں آپ کی فصل کو نقصان پہنچا سکتی ہیں۔