شملہ مرچ اور مرچی

Capsicum


پانی دینا
متوسط

زراعت
ٹرانسپلانٹ شدہ

کٹائی
90 - 150 دن

مزدور
متوسط

سورج کی روشنی
مکمل سورج

pH کی قدر
5.5 - 7

درجہ حرارت
21°C - 29°C

زرخیزکاری
متوسط


شملہ مرچ اور مرچی

تعارف

فلفل یا لال مرچ نائٹ شیڈ فیملی کا پھول دینے والا پودا ہے۔ یہ امریکہ میں پیدا ہوتا ہے (اس کی زراعت کی باقیات میکسکو میں 3000 قبل از مسیح پائے گئے ہیں) اور باقی دنیا میں سولہویں صدی کے بعد متعارف ہوا ہے۔ آج 50٪ فلفل چین میں اگائی جاتی ہے اور اس کے بعد میکسکو، ترکی، انڈونیشیا اور ہسپانیہ میں۔

مشاورت

مفید تجاویز دیکھنے کیلئے اپنا نشوونما کا مرحلہ منتخب کریں!

اپنے موسم کی تیاری

مٹی میں کاشکاری اور بہتر پیداوار کے لیے نالیاں بنانا
مرچ کے پودے کی مناسب نشوونما کی تجاویز

دیکھ بھال

نکاسی اہم ہے اور مٹی کی قسم، اونچی کیاریوں کے پیش نظر لازمی بھی ہو سکتی ہے۔ مٹی کو خزاں میں گہرا ہل چلا کر تیار کیا جاتا ہے۔ شملہ مرچ کو عموماً تخمی پودے کے بطور اگایا جاتا ہے اور پھر جب انجماد کا خطرہ گزر جائے تو اسے لگایا جاتا ہے۔ باعزت نرسریوں سے تخمی پودے حاصل کرنے کو ترجیح دی جاتی ہے تاکہ ایسے پودے حاصل کیے جا سکیں جو اچھی طرح اگیں اور امراض سے پاک ہوں۔ ہوا توڑنے والے پودے جیسے کہ رائی مکئی اور میٹھی مکئی قطاروں میں اگائیں جہاں ہوا سے نقصان کا اندیشہ ہو۔ پرندوں کے مینور یا کمپوسٹ کا اطلاق تجویز کیا جاتا ہے، کم از کم پودا لگانے سے 4 ہفتے پہلے۔

مٹی

لال مرچ بہت سی قسم کی مٹی میں اگائی جا سکتی ہے مگر گہری، زرخیز اور اچھی نکاسی والی مٹی پر بہترین اگتی ہے۔ مٹی کا پی ایچ 5.5 تا 7.0 کی رینج میں ہونا چاہیئے۔ یہ بہت طاقتور گہری ٹیپ جڑیں بنا سکتے ہیں (1 میٹر سے زیادہ)۔ ہمواری ڈھلانیں مطلوب ہیں کیونکہ ان سے نکاسی میں مدد ملتی ہے مگر لازمی نیہں۔ کھیت میں گڑھے سیلاب زدگی کا باعث بن سکتے ہیں۔

آب و ہوا

لال مرچوں کیلئے نشوونما کے مثالی حالات میں گرم زرخیز زمین کے ساتھ سورج کی پوزیشن شامل ہے، مثالی طور پر 21 تا 29 ڈگری سینٹی گریڈ، جو نم ہو مگر دلدلی نہ ہو۔ بہت زیادہ نم زمینیں تخمی پودوں کے 'ڈیمپ آف' کا باعث بنتی ہیں جس کی وجہ سے نمو پذیری میں کمی واقع ہو جاتی ہے۔ پودے 12 ڈگری سینٹی گریڈ تک کا درجہ حرارت برداشت کر لیتے ہیں (مگر پسند نہیں کرتے) اور انجماد کیلئے حساس ہوتے ہیں۔ لال مرچ کا پھول کھلنا دن کے وقت کی طوالت سے بے حد مربوط ہے۔ پھول خود سے زیرہ پوشی کر سکتے ہیں۔ تاہم، بہت زیادہ بلند درجہ حرارت پر (33 تا 38 ڈگری سینٹی گریڈ)، زرگل نمو پذیری کی قابلیت کھو دیتے ہیں اور کامیاب زیرہ پوشی کے امکانات کم ہو جاتے ہیں۔

ممکنہ بیماریاں

نشوونما کا مرحلہ منتخب کر کے دیکھیں کہ اس عرصے کے دوران کون سی بیماریاں آپ کی فصل کو نقصان پہنچا سکتی ہیں۔

شملہ مرچ اور مرچی

شملہ مرچ اور مرچی

اگانے کے بارے میں سبھی معلومات پلانٹکس میں حاصل کریں!


شملہ مرچ اور مرچی

Capsicum

شملہ مرچ اور مرچی
ابھی پلانٹکس استعمال کریں!

تعارف

فلفل یا لال مرچ نائٹ شیڈ فیملی کا پھول دینے والا پودا ہے۔ یہ امریکہ میں پیدا ہوتا ہے (اس کی زراعت کی باقیات میکسکو میں 3000 قبل از مسیح پائے گئے ہیں) اور باقی دنیا میں سولہویں صدی کے بعد متعارف ہوا ہے۔ آج 50٪ فلفل چین میں اگائی جاتی ہے اور اس کے بعد میکسکو، ترکی، انڈونیشیا اور ہسپانیہ میں۔

اہم حقائق

پانی دینا
متوسط

زراعت
ٹرانسپلانٹ شدہ

کٹائی
90 - 150 دن

مزدور
متوسط

سورج کی روشنی
مکمل سورج

pH کی قدر
5.5 - 7

درجہ حرارت
21°C - 29°C

زرخیزکاری
متوسط

مشاورت

مفید تجاویز دیکھنے کیلئے اپنا نشوونما کا مرحلہ منتخب کریں!

اپنے موسم کی تیاری

مٹی میں کاشکاری اور بہتر پیداوار کے لیے نالیاں بنانا
مرچ کے پودے کی مناسب نشوونما کی تجاویز
شملہ مرچ اور مرچی

شملہ مرچ اور مرچی

اگانے کے بارے میں سبھی معلومات پلانٹکس میں حاصل کریں!

دیکھ بھال

نکاسی اہم ہے اور مٹی کی قسم، اونچی کیاریوں کے پیش نظر لازمی بھی ہو سکتی ہے۔ مٹی کو خزاں میں گہرا ہل چلا کر تیار کیا جاتا ہے۔ شملہ مرچ کو عموماً تخمی پودے کے بطور اگایا جاتا ہے اور پھر جب انجماد کا خطرہ گزر جائے تو اسے لگایا جاتا ہے۔ باعزت نرسریوں سے تخمی پودے حاصل کرنے کو ترجیح دی جاتی ہے تاکہ ایسے پودے حاصل کیے جا سکیں جو اچھی طرح اگیں اور امراض سے پاک ہوں۔ ہوا توڑنے والے پودے جیسے کہ رائی مکئی اور میٹھی مکئی قطاروں میں اگائیں جہاں ہوا سے نقصان کا اندیشہ ہو۔ پرندوں کے مینور یا کمپوسٹ کا اطلاق تجویز کیا جاتا ہے، کم از کم پودا لگانے سے 4 ہفتے پہلے۔

مٹی

لال مرچ بہت سی قسم کی مٹی میں اگائی جا سکتی ہے مگر گہری، زرخیز اور اچھی نکاسی والی مٹی پر بہترین اگتی ہے۔ مٹی کا پی ایچ 5.5 تا 7.0 کی رینج میں ہونا چاہیئے۔ یہ بہت طاقتور گہری ٹیپ جڑیں بنا سکتے ہیں (1 میٹر سے زیادہ)۔ ہمواری ڈھلانیں مطلوب ہیں کیونکہ ان سے نکاسی میں مدد ملتی ہے مگر لازمی نیہں۔ کھیت میں گڑھے سیلاب زدگی کا باعث بن سکتے ہیں۔

آب و ہوا

لال مرچوں کیلئے نشوونما کے مثالی حالات میں گرم زرخیز زمین کے ساتھ سورج کی پوزیشن شامل ہے، مثالی طور پر 21 تا 29 ڈگری سینٹی گریڈ، جو نم ہو مگر دلدلی نہ ہو۔ بہت زیادہ نم زمینیں تخمی پودوں کے 'ڈیمپ آف' کا باعث بنتی ہیں جس کی وجہ سے نمو پذیری میں کمی واقع ہو جاتی ہے۔ پودے 12 ڈگری سینٹی گریڈ تک کا درجہ حرارت برداشت کر لیتے ہیں (مگر پسند نہیں کرتے) اور انجماد کیلئے حساس ہوتے ہیں۔ لال مرچ کا پھول کھلنا دن کے وقت کی طوالت سے بے حد مربوط ہے۔ پھول خود سے زیرہ پوشی کر سکتے ہیں۔ تاہم، بہت زیادہ بلند درجہ حرارت پر (33 تا 38 ڈگری سینٹی گریڈ)، زرگل نمو پذیری کی قابلیت کھو دیتے ہیں اور کامیاب زیرہ پوشی کے امکانات کم ہو جاتے ہیں۔

ممکنہ بیماریاں

نشوونما کا مرحلہ منتخب کر کے دیکھیں کہ اس عرصے کے دوران کون سی بیماریاں آپ کی فصل کو نقصان پہنچا سکتی ہیں۔